کھولے گئے اسکولوں کی رجسٹریشن منسوخ کرنیکا فیصلہ

وزیر تعلیم سندھ  سعید غنی نے گزشتہ روز  شہر میں کھولے جانے والے نجی اسکولوں کی رجسٹریشن منسوخ کرنے کاحکم دیا ہے۔صوبائی وزیر تعلیم سعید غنی نے متعلقہ  ڈپٹی کمشنرزکو اسکول انتظامیہ کے خلاف سخت اقدامات کرنے کا حکم  دیتے ہوئے ان تمام اسکولوں کی رجسٹریشن فوری منسوخ  کرنے کاحکم دیا  ہے ۔صوبائی وزیر سعید غنی کا اپنے دفتر میں محکمہ تعلیم کے حوالے سے اجلاسوں اور یونیسیف سندھ کی چیف مس کرسٹینا سے ملاقات کے دوران کہنا تھا   کہ تعلیمی اداروں کو 15 ستمبر کو کھولنے کا حتمی فیصلہ ایس سی او سی کے اجلاس میں ہوگا۔سعید غنی  نے کہا کہ ہماری پوری کوشش ہے کہ طلبہ و طالبات کا کورونا کے باعث جو تعلیمی عمل تعطل کا شکار ہوا اور اس کے باعث جو خلا ان کی تعلیم میں آیا ہے اس کو پورا کیا جائے،تعلیمی اداروں کی بندش کا فیصلہ ایک مشکل فیصلہ تھا تاہم وقت نے ثابت کیا کہ یہ فیصلہ درست تھا۔اس موقع پر سیکریٹری تعلیم سندھ احمد بخش ناریجو، سیکریٹری کالجز باقر نقوی،ایڈیشنل سیکریٹری تعلیم ڈاکٹر فوزیہ، آصف میمن موجود تھیں،اجلاس میں صوبے بھر میں تعلیمی نصاب، کورونا وائرس کے بعد کی صورتحال، نئے تعلیمی سال سمیت دیگر امور کا بھی جائزہ لیا گیا۔بعد ازاں صوبائی وزیر تعلیم سعید غنی سے یونیسف سندھ چیپٹر کی چیف کرسٹینا نے ملاقات کی۔ملاقات کے دوران مس کرسٹینا نے صوبائی وزیر کو سندھ حکومت کی جانب سے کووڈ 19 کے حوالے سے کیے جانے والے اقدامات پر سراہا۔ایڈیشنل سیکریٹری آصف میمن نے صوبائی وزیر کو بتایا کہ صوبے میں 9000 وہ اسکول جہاں صوبے کے 80 فیصد داخلے ہیں وہاں تمام ضروریات کی فراہمی کے حوالے سے جاری منصوبوں کے فیز ون کے 4170 اسکولوں میں سے 1700 سے زائد اسکولوں میں کام مکمل کرلیا گیاہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں