پاکستان سے مقبوضہ کشمیر لڑنے جانے والاکشمیریوں اور ملک کا دشمن ہوگا، وزیر اعظم

طورخم: وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ پاکستان سے جاکر بھارت جاکر لڑنے والا پاکستان اور کشمیریوں دونوں کا دشمن ہوگا۔طورخم بارڈر پر پریس کانفرنس کے دوران وزیراعظم نے کہا کہ دعا ہے افغانستان میں امن قائم ہو، افغانستان میں امن سے خطہ ترقی کرے گا، امن سے پشاور تجارت کا حب بن جائےگا، طورخم بارڈر سسٹم سے وسطی ایشیائی ریاستوں کو بھی فائدہ ہوگا۔وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ اس وقت بھارتی حکومت پر شدید دباؤ ہے، پاکستان سے جاکر بھارت جاکر لڑنے والا پاکستان اور کشمیریوں دونوں کا دشمن ہوگا کیونکہ بھارتی حکومت کو مقبوضہ کشمیر میں صرف بہانہ چاہیئے،بھارتی حکومت پہلے ہی کہہ رہی ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں پاکستان دہشتگردی کررہا ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ بھارت کا مسئلہ ہے کہ اس پر قبضہ ہوگیا ہے، بھارت کی بدقسمتی ہے کہ انتہا پسند ہندوؤں نے قبضہ کرلیا ہے،آر ایس ایس کی پالیسی پاکستان اور مسلمانوں کیخلاف ہے،موجودہ صورتحال میں مودی سرکار کے ساتھ مذاکرات نہیں ہوسکتے۔وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ بدقسمتی سے جس ملک میں اپوزیشن کا نظریہ نہ ہو اس ملک میں جمہوریت صحیح معنوں میں نہیں چلتی، اپوزیشن کا ایک نکاتی ایجنڈا ہے کہ انہیں این آراو دیا جائے، پہلے دن سے اپوزیشن نے مجھے پارلیمنٹ میں تقریر کرنے نہیں دی،جو مرضی ہوجائے ہم انہیں این آر او نہیں دیں گے کیونکہ ان کی لوٹ مار کی وجہ سے آج ملک میں مہنگائی ہے، روپے کی قدر میں اضافہ ہوا،دونوں سیاسی جماعتوں کے باعث ملک خسارے میں ہے۔انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ (ن) اور پیپلز پارٹی نے اپنے دور میں خوب لوٹ مار کی، دونوں جماعتوں نے ایک دوسرے کیخلاف کیس بنائے، منی لانڈرنگ کرنے والوں اور پیسے بنانے والوں کا احتساب نہیں کریں گے تو ملک نہیں چلے گا، ہم نے حکومت میں آکر اداروں کو آزاد کیا۔گھوٹکی میں پیش آنے والے واقعے پر عمران خان نے کہا کہ پاکستان میں سب شہریوں کے حقوق برابر ہیں، گھوٹکی واقعات دورہ امریکا کو سبوتاژ کرنے کی سازش ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں