مقبوضہ کشمیر، کرفیو کا 50واں دن: گرفتاریاں اور تشدد معمول

مقبوضہ کشمیر میں کرفیو اورپابندیوں کا آج 50واں روز ہے ۔بھارتی فوج کے جگہ جگہ کڑے پہرے ہیں۔عوام محصور ہیں قابض بھارتی فورسز کی جانب سے گھروں پر چھاپے مارے جا رہے ہیں۔گرفتاریاں اور تشدد معمول بن گیا۔24 گھنٹے کے دوران ایک اورکشمیری شہید کردیا گیا۔مقبوضہ وادی کو دنیا کی سب سے بڑی جیل بنے 50 روزہوگئے۔ پانچ اگست سے لاکھوں کشمیری گھروں میں قید ہیں۔ خوراک ، ادویات ہر شے نایاب ہوچکی ہے ۔ وادی میں فاقہ کشی کی صورتحال ہے۔ میڈیا پر پابندی ہے، انٹرنیٹ اورموبائل سروس ابھی تک بند ہے۔ پوری دنیا سے کشمیری کٹ کر رہ گئے ہیں۔ سید علی گیلانی، میرواعظ عمرفاروق اور یاسین ملک سمیت متعدد رہنما اور ہزاروں کشمیری تاحال گرفتار ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں