شاہ محمود قریشی کی بھارت کو مذاکرات کی مشروط پیشکش

شاہ محمود قریشی کی بھارت کو مذاکرات کی مشروط پیشکششیئرٹویٹ
ویب ڈیسک ہفتہ 31 اگست 2019کشمیریوں کے جذبات کو روند کر مذاکرات کی میز پر نہیں بیٹھا جا سکتا، وزیرخارجہشمیریوں کے جذبات کو روند کر مذاکرات کی میز پر نہیں بیٹھا جا سکتا، وزیرخارجہاسلام آباد: وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے بھارت کو مذاکرات کی مشروط پیشکش کردی۔برطانوی نشریاتی ادارے (بی بی سی) کو انٹرویو دیتے ہوئے وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ پاکستان نے مذاکرات سے کبھی انکار نہیں کیا لیکن بھارت کی جانب سے مذاکرات کا ماحول دکھائی نہیں دے رہا، پاکستان کو دو طرفہ مذاکرات پر کوئی اعتراض نہیں اور کسی تیسرے فریق کی معاونت یا ثالثی کو بھی خوش آمدید کہا جائے گا۔زیرخارجہ نے مقبوضہ کشمیر کی صورتحال کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ ایسے ماحول میں جہاں کرفیو نافذ ہے، اجتماعی زیادتیاں ہو رہی ہیں اور لوگ قید و بند کی صعوبتیں برداشت کر رہے ہیں، ایسے میں مجھے مذاکرات کا کوئی ماحول دکھائی نہیں دے رہا تاہم بھارت سنجیدہ ہے تو پہلے کشمیری رہنماؤں کو رہا کرے، وہاں سے فوری طور پر کرفیو ہٹائے اور مجھے اجازت دے کہ میں کشمیری قیادت سے مل پاؤں اور مشاورت کر سکوں، ایسے میں مذاکرات ہوسکتے ہیں کیوں کہ کشمیریوں کے جذبات کو روند کر مذاکرات کی میز پر نہیں بیٹھا جا سکتا۔
شاہ محمود قریشی نے کہا کہ پاکستان کے پاس جنگ کا کوئی آپشن نہیں، جنگ سے لوگوں کی بربادی ہو گی، دنیا بھی اس سے متاثر ہو گی اور پاکستان نے کبھی جارحانہ پالیسی نہیں اپنائی، ہماری ترجیح ہمیشہ امن ہی رہی ہے تاہم پاکستان پر جنگ مسلط کی گئی جس طرح 26 فروری کو کی گئی تھی تو افواج پاکستان بھی اور قوم بھی تیار ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں