دو پولیس اہلکاروں نے اپنے ساتھیوں سے مل کر خاتون کو مبینہ طور پر اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا

کراچی نارتھ کراچی کے علاقے شادمان ٹاﺅن میں 2 پولیس اہلکاروں سمیت 6 مشتبہ افراد نے مبینہ طور پر خاتون کو اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنا دیا۔واقعے کا مقدمہ درج ہونے کے بعد تمام ملزمان کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔روزنامہ جنگ کے مطابق نارتھ کراچی شادمان ٹاﺅن کی رہائشی خاتون نے 2 پولیس اہلکاروں سمیت 6 افراد پر مبینہ زیادتی کا الزام لگایا ہے۔واقعے کا مقدمہ متاثرہ خاتون کی مدعیت میں خواجہ اجمیر نگری تھانے میں درج کر لیا گیا ہے۔زیادتی کی شکار خاتون نے پولیس کو بیان دیا ہے کہ 26 ستمبر کو دوپہر 12 بجے اس کے گھر میں 6 افراد زبردستی داخل ہوئے، ملزمان اپنے 2 ساتھیوں کو سرفراز اور کامران ملک کے نام سے پکار رہے تھے۔خاتون نے اپنے بیان میں مزید کہا ہے کہ ملزمان نے اسلحے کے زور پر ا±س سے زیادتی کی، تصویریں اور ویڈیو بھی بنائی۔خاتون کا یہ بھی کہنا ہے کہ ملزمان نے جاتے ہوئے دھمکایا کہ اگر کسی کو بتایا تو نقصان ہو گا، تاہم اس نے اپنے شوہر کو گھر آنے کے بعد واقعے سے آگاہ کیا اور اس کے ہمراہ مقدمہ درج کرانے کے لیے تھانے آگئی۔پولیس نے خاتون کی شکایت پر مقدمہ درج کرتے ہوئے پولیس اہلکار سرفراز اور ملک دانش سمیت 6 ملزمان کو گرفتار کر لیا۔پولیس کے مطابق اہلکار سرفراز ڈی آئی جی ویسٹ آفس میں جبکہ ملک دانش گلشنِ معمار میں تعینات ہے۔دونوں ملزمان متاثرہ خاتون کے محلے میں ہی رہتے ہیں جبکہ دیگر ملزمان میں عبدالرزاق، نعیم، لیاقت اور کامران ملک شامل ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں