ایک ہی دن میں 2 ٹک ٹاک اسٹارز نے کیوں خود کشی کر لی؟

میرٹھ: بھارت میں 2 ٹک ٹاک اسٹار نے ایک ہی دن میں پھانسی لگا کر خود کشی کر لی۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق بھارتی ریاست اتر پردیش کے شہر میرٹھ میں 22 سالہ طالبہ نے اپنی زندگی کا خاتمہ کر لیا، سندھیا چوہان کے بارے میں معلوم ہوا کہ وہ ٹک ٹاک اسٹار تھی اور ملک میں ٹک ٹاک پر پابندی سے کافی مایوس تھی۔بھارت میں لاک ڈاؤن کے باعث سندھیا چوہان دہلی یونی ورسٹی بند ہونے کے بعد میرٹھ کے علاقے پلوپورم گرین پارک میں واقع گھر پر تھی، گزشتہ شام اس نے کمرے میں خود کو بند کر کے گلے میں پھندا لگا کر خود کشی کر لی۔سندھیا چوہان ٹک ٹاک پر کافی مشہور تھی، اس کی ویڈیوز وسیع سطح پر پسند کیے جاتے تھے، جاننے والوں کا کہنا ہے کہ بھارت میں ٹک ٹاک پر پابندی لگنے کے بعد وہ مایوس تھی، کئی ماہ سے وہ ذہنی دباؤ کا بھی شکار تھی تاہم اس کی وجہ معلوم نہیں ہو سکی، ٹک ٹاک پر پابندی کے بعد اس نے انتہائی قدم اٹھایا۔گزشتہ روز جب سندھیا اپنے کمرے سے نہ نکلی تو پولیس کو اطلاع دی گئی، پولیس نے کمرے کا دروازہ توڑا تو چھت سے سندھیا کی لاش جھول رہی تھی، اسپتال میں ڈاکٹروں نے اس کی موت کی تصدیق کی۔

دہلی یونیورسٹی کی طالبہ سندھیا چوہان

معلوم ہوا کہ نوجوان طالبہ ایک سب انسپکٹر سنجے چوہان کی بیٹی تھی، وہ دہلی یونی ورسٹی میں پڑھ رہی تھی اور وہیں ہاسٹل میں مقیم تھی۔گزشتہ روز میرٹھ کے علاقے کنکر کھیڑا میں بھی ایک ٹک ٹاک اسٹار 35 سالہ مونیکا تیاگی نے خود کشی کی ہے، وہ ایک بیوٹی سیلون بھی چلاتی تھی جو لاک ڈاؤن میں بند ہو گیا تھا، جس کی وجہ سے اس نے پھانسی لگا کر خود کشی کر لی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں